بےجا تنقید

ڈاکٹر تیزی سے ہسپتال میں داخل ہوا ، کپڑے تبدیل کئے اور سیدھا آپریشن تھیٹر کی طرف بڑھا ۔   اُسے ایک بچے کے آپریشن کے لئے فوری اور ہنگامی طور پر بلایا گیا تھا ۔

ہسپتال میں موجود بچے کا باپ ڈاکٹر کو آتا دیکھ کر چِلایا ، ' اتنی دیر لگا دی ؟ تہمیں پتا نہیں ہے میرا بیٹا سخت اذیت میں ہیے ، زندگی اور موت کی کشمکش میں ہے ، تم لوگوں میں کوئ احساس ذمہ داری نہیں ہے ؟ ' 
' مجھے افسوس ہے کہ میں ہسپتال میں نہیں تھا مجھے جیسے ہی کال ملی میں جتنی جلدی آ سکتا تھا آیا ہوں ' ، ڈاکٹر  نے مسکرا کر جواب دیا ، ' اپ میں چاہوں گا آپ سکون سے بیٹھیئے تا کہ میں اپنا کام شروع کر سکوں ' ۔
' میں اور سکون سے بیٹھوں ، اگر اس حالت میں تمہارا بیٹا ہوتا تو کیا تم سکون سے بیٹھتے ؟ اگر تمہارا اپنا بیٹا ابھی مر رہا ہو تو تم کیا کرو گے  ؟ '  باپ غصے سے بولا ۔
ڈاکٹر  نے پر مسکرا کر کہا ، ' ہماری مقدس کتاب کہتی ہے کہ ہم مٹی سے  بنے ہیں اور ایک دن ہم سب کو مٹی میں مل جانا ہے ، اللہ بہت بڑا ہے اور غفور رحیم ہے ، ڈاکٹر کسی کو زندگی نہیں دیتا ہے اور نا ہی کسی کی عمر بڑھا سکتا ہے ۔ اب آپ آرام سے بیٹھیں اور اپنے بیٹے کے لئے دعا کریں ، ہم آپ کے بیٹے کو بچانے کی پوری کوشش کریں گے '۔  ' بس ان لوگوں کی نصیحتیں سنو چاہے تمہیں ان کی ضرورت ہو یا نہ ہو ' ، بچے کا باپ بڑبڑایا ۔

آپریشن میں کافی دیر لگ گئ لیکن بل آخر جب ڈاکٹر آپریشن تھیٹر سے باہر آیا تو اُس کے چہرے پر مسکراہٹ تھی ۔ ' آپ کا بیٹا خطرے سے باہر ہے ، اگر کوئ سوال ہو تو نرس سے پوچھ لینا ' ، یہ کہہ  کر وہ آگے بڑھ گیا ۔
' کتنا مغرور ہے یہ شخص چند لمحوں کے لئے بھی نہیں رکا کہ میں اپنے بچے کی حالت کے بارے میں کچھ پوچھ لیتا '، بچے کے باپ نے ڈاکٹر کے جانے کے بعد نرس سے کہا ۔
' اس کا بیٹا کل ایک حادثے کا شکار ہو گیا تھا ، جب ہم نے اُسے آپ کے بیٹے کے لئے کال کی تھی تو وہ اپنے بیٹے کی تدفین کر رہا تھا ، اور اب جبکہ اس نے آپ کے بیٹے کی جان بچا لی ہے وہ دوبارہ تدفین مکمل کرنے گیا ہے ' ، نرس نے روتے ہوئے بتایا ۔

کبھی کسی پر بے جا تنقید نہ کرو کیوں کہ تم نہیں جانتے کہ اٰس کی زندگی کیسی ہے اور وہ کن کن مشکلات میں مبتلا ہے یا ہو سکتا ہے ۔

New Comment